جنت سخی حسینؑ کی ہے

کلام: ملک محسن عباس


کسی کے بس میں کہاں ہمسری حسینؑ کی ہے
کمال و اوج میں وہ برتری حسینؑ کی ہے
یہاں زمانوں کو سیراب ہوتے دیکھا ہے
بلا کی فیض رساں تشنگی حسینؑ کی ہے
بہشت کی جو طلب ہے تو آ حسینؑ کے پاس
تجھے خبر ہے کہ جنت سخی حسینؑ کی ہے
فساد، ظلم، جفا، غیر کا تعارف ہے
وفا، خلوص، اماں، آشتی حسینؑ کی ہے
دیار عقبی کو جاتے ہیں کربلا سے حُر
بصد خوشی کہ وہ اقلیم بھی حسینؑ کی ہے
پھر ان کے در سے ہمیں تو کہیں نہیں جانا
کہ کائنات میں جب خواجگی حسینؑ کی ہے
میان باطل و حق امتیاز کی خاطر
لکیر خون سے کھینچی گئی حسینؑ کی ہے
میرے خدا تیری توحید کے ثبوت میں بھی
گواہی سب پہ جو بھاری رہی حسینؑ کی ہے

آغا جہانگیر بخاری

بانی مدیر و چیف ایگزیکیٹو

Next Post

امام حسینؑ کی قربانیاں اور ہمارے اعمال

جمعہ اگست 13 , 2021
نمازِ شب نور کی ایک کیفیت کا نام ہے! نماز شب وجدانِ روح کی عظمت کا نام ہے۔ اسی لیے نماز شب پڑھنے والے کی آنکھوں میں نور اور طبیعت میں سکون نظر آتا ہے
Hussain AS

مزید دلچسپ تحریریں