ہم غمزدوں کے غم کا مداوا تمہی تو ہو

ہم غمزدوں کے غم کا مداوا تمہی تو ہو
فرقت نصیب دل کا سہارا تمہی تو ہو

نقش و نگار عالم بالا تمہی تو ہو
تزئین بزم عرش معلی تمہی تو ہو

کیا کیا لقب حضور کو حق نے عطا کیے
یٰس تمہی مزمِل و طٰہ تمہی تو ہو

جن و بشر ملائک و غلماں تو اک طرف
پتھر بھی جس کا پڑھتے ہیں کلمہ تمہی تو ہو

محشر میں انبیاء کو بھی ہے جس کی جستجو
اے صاحب شفاعت کبری تمہی تو ہو

دامن تمہارا چھوڑ کے جائے تو کس طرف
تائب کا اور کون ہے آقا تمہی تو ہو

Taib Rizvi

حکیم تائبؔ رضوی مرحوم

بانی مدیر و چیف ایگزیکیٹو

فطرت مری مانند نسیم سحری ہے

رفتار ہے میری کبھی آہستہ کبھی تیز

پہناتا ہوں اطلس کی قبا لالہ و گل کو

کرتا ہوں سر خار کو سوزن کی طرح تیز

تمام تحریریں لکھاریوں کی ذاتی آراء ہیں۔ ادارے کا ان سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

streamyard

Next Post

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اور بہرائچ

اتوار اکتوبر 17 , 2021
1857ءکی پہلی جنگ آزادی کے بعد مسلمانان ہند پر جو ظلم وستم توڑے گئے وہ ہم سوچ ہی نہیں سکتے جو ‏لوگ ملک کے حاکم تھے ان کو سب سے زیادہ انگریزوں کے جور و ستم کو
ali ghadh

مزید دلچسپ تحریریں