زیست میں اپنی بہاراں کیجئے

زیست میں اپنی بہاراں کیجئے
” خوب مدحِ شاہِ خوباں کیجئے”
سب زباں پہ لا کے ذکرِ مصطفیٰؐ
اپنی بخشش کا یوں ساماں کیجئے
مدحتوں میں ہو اجالے کا سماں
چاند تارے لا کے تاباں کیجئے
ہر جگہ میلاد میں ہوں قمقمے
گھر، محلے کو درخشاں کیجئے
گنبدِ خضریٰ ،کہیں پہ نقش پا 
اپنی گلیوں میں نگاراں کیجئے
آمدِ میلاد پر عاشق سبھی
روبرو سب کے چراغاں کیجئے
چل کے سیرت پہ مسلمانو! سدا
مصطفیٰؐ کو اپنا دل جاں کیجئے
قافلے کب کے مدینے چل دیے
آقاؐ مجھ کو بھی تو ذیشاں کیجئے
چھوڑ کر ذکرِ محمدؐ کا جہاں
اپنی قسمت کو نہ ویراں کیجئے
دیں زیارت کی اجازت بھی حضورؐ
پورے قائم کے بھی ارماں کیجئے

hubdar qaim

سیّد حبدار قائم

آف غریب وال

حبدار قائم

میرا تعلق پنڈیگھیب کے ایک نواحی گاوں غریبوال سے ہے میں نے اپنا ادبی سفر 1985 سے شروع کیا تھا جو عسکری فرائض کی وجہ سے ١1989 میں رک گیا جو 2015 میں دوبارہ شروع کیا ہے جس میں نعت نظم سلام اور غزل لکھ رہا ہوں نثر میں میری دو اردو کتابیں جبکہ ایک پنجابی کتاب اشاعت آشنا ہو چکی ہے

Next Post

8جنوری ...تاریخ کے آئینے میں

ہفتہ جنوری 8 , 2022
آٹھ جنوری ...تاریخ کے آئینے میں
January 08 in History