جداں نظر ترا تِل آندا اے

جداں نظر ترا تِل آندا اے

مینڈے دل دا پُھل کِھڑ جاندا اے

یاقوت جئے رخساراں تے

ہک وکھری شان ودھاندا اے

جداں تکنے ہوون  ہوٹھ تینڈے

گل شوق دے پھل اے پاندا اے

عرشاں دے تخت اتے بہہ کے

سونہڑاں رب ہک نُختہ لاندا اے

جے لال گلابی رنگ ہووے

تِل دنیا تے دُھم پاندا اے

تِل ویکھ کے ریساں چن کردا

ہر تارا وی کُرلاندا اے

پلکاں دی چھاں تِل تے کر گھن

تِل دُھپ کولوں گھبراندا اے

رُک ونجن اکھیاں ویکھن لئی

تِل ہس ہس کے شرماندا اے

جداں قائم اکھیاں ویکھ گھنن

تِل سوچاں وچ ڈب جاندا اے

سید حبدار قائم آف اٹک

حبدار قائم

میرا تعلق پنڈیگھیب کے ایک نواحی گاوں غریبوال سے ہے میں نے اپنا ادبی سفر 1985 سے شروع کیا تھا جو عسکری فرائض کی وجہ سے ١٩٨٩ میں رک گیا جو 2015 میں دوبارہ شروع کیا ہے جس میں نعت نظم سلام اور غزل لکھ رہا ہوں نثر میں میری دو اردو کتابیں جبکہ ایک پنجابی کتاب اشاعت آشنا ہو چکی ہے

Next Post

کیا سے کیا ہوگئے دیکھتے دیکھتے

جمعرات مارچ 25 , 2021
اردو کا جنم شہنشاہ شاہ جہان کے زمانے میں دلی میں ہوا اور بقول محمود خان شیرانی ، اردو دلی میں جنمی ، اترپردیش میں بیاہی گئی اور اب بڑھاپا پنجاب میں کاٹ رہی ہے ۔
سیّدزادہ سخاوت بخاری