گراموفون

گزشتہ روز ایک دوست کی والدہ اس جہاں فانی سے رحلت فر ما گئیں اللہ ان کے درجات بلند کرے اور گھر والوں کو صبر عطاء کرئے ، آمین ۔۔ اطلاع ملنے پر میں دفتر سے اجازت لیکر اسپتال پہنچ گیا اور اس وقت تک کوئی اور نہیں پہنچا تھا خیر میں نے ان کو تلاش کیا اور حسب توقع مرحومہ کے گھر والوں کو حواس باختہ پایا ڈاکٹر سے معاملات دریافت کئیے اور چند لوگوں کو کال کی ان سے کاغذی کاروائ کا طریقہ کار پوچھا الحمدلله انہوں نے بھر پور ساتھ دیا اور کچھ ہی گھنٹوں کی بھاگ دوڑ کے بعد ایمبیسی ، وزارت صحت ، پولیس سب سے اجازت نامے مل گئے اب اگلا مرحلہ تدفین کا تھا اور وہ بھی فورا ہی حل ہوگیا لیکن گورکن کے ایک سوال نے مجھے شدید حیرت میں ڈال دیا وہ یہ کہ بھائی جان قبر تیار ہو جائے گی غسل کا انتظام بھی ہے لیکن ” کیا آپ کے پاس اپنا کفن ہے ؟ ” یا ہم مہیا کریں۔ ۔ ۔ اس لمحے مجھے یہ خیال آیا کہ کچھ دن پہلے میں نے اپنی ایک دیرینہ خواہش کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئیے ورجن اٹلانٹک سے کلاسیکی انداز میں بنا گراموفون لیا تھا اور یہ سوچ رہا تھا کہ اب اس کے بعد میری خواہشات کی لسٹ میں لینے کو اور کیا بچا ہے مگر کچھ یاد نہیں آیا لیکن یہ تو کبھی سوچا ہی نہیں تھا کہ میں نے کبھی مانگ کر کپڑے نہیں پہنے مگر وقت رحلت اگر کفن مانگنا پڑے گا تو کون دے گا ۔۔ تو دوستوں بات مختصر ہے کہ دنیاوی معاملات کیساتھ ساتھ آخرت کے سفر کا بھی انتظام ہونا چاہیے ۔ ۔

شاندار بخاری

در بارہ شاندار بخاری

یہ بھی دیکھیں

جوئی بائیڈن اور کملا حارس کون ؟

امریکہ میں کالا منتخب ہو یا چٹا ، اس سے ہماری سیاسی صحت پر کوئی اثر اس لئے نہیں پڑتا کہ امریکی قوم نے کم و بیش 3 سو سال کا سفر طے کرنےکے بعد ایک ہی بات سمجھی اور وہ یہ کہ ، ” ہمارا فائدہ کس بات میں ہے ” ان کی دوستی اور دشمنی اسی ایک اصول کے گرد گھومتی ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: